April 16, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/customessayonline.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

File photo. Photo: INN

تارکین وطن کو لے جانے والی ربڑ کی کشتی ترکی کے شمالی ایجیئن ساحل پر جمعہ کو ڈوب گئی جس میں ۱۶؍ افراد ہلاک ہو گئے۔ گورنر الہامی اکتاس نے بتایا کہ ترک کوسٹ گارڈ کے اہلکاروں نے کناکلے صوبے کے قصبے اشیبات سے دو تارکین وطن کو سمندر سے بچایا جبکہ دو دیگر خود ساحل تک پہنچنے میں کامیاب ہو گئے۔ 
انہوں نے کہا کہ یہ واضح نہیں ہے کہ کشتی کے ڈوبنے کے وقت اس میں کتنے افراد سوار تھے اور کوسٹ گارڈ علاقے کی تلاش جاری رکھے ہوئے ہے۔ اکتاس نے بتایا کہ برآمد ہونے والی لاشوں میں دو شیر خوار بھی شامل تھے۔ تارکین وطن کی قومیت کا فوری طور پر پتہ نہیں چل سکا ہے۔ 
اگرچہ حالیہ برسوں میں ان کی تعداد میں کمی آئی ہے لیکن زیادہ تر مشرق وسطیٰ اور افریقہ سے آنے والے تارکین وطن اکثر یورپی ممالک میں بہتر زندگی کی تلاش میں یونان پہنچنے کی کوشش کرنے کیلئے ترکی ہو کر نکل جاتے ہیں۔ ترکی سے نکلنے والے کچھ تارکین وطن بھی اٹلی جانے کی کوشش کرتے ہیں۔ 
ترک کوسٹ گارڈ نے کہا کہ اس نے اس ہفتے کم از کم ۹۳؍تارکین وطن کو پکڑا جو ترکی کے ساحل سے کشتیوں پر جانے کی کوشش کر رہے تھے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *